top of page

نعت کی خوشبو گھر گھر پھیلے

Naat Academy Naat Lyrics Naat Channel-Naat-Lyrics-Islamic-Poetry-Naat-Education-Sufism.png

Huroof e tahajji Naat – Ashfaq Ahmed Gauri

‏اَلصَّلٰوۃُ وَالسَّلامُ عَلَیکَ یَا سَیَّدِی یَا رَسُولَ اللہ وَ عَلٰی آلِکَ وَ اَصحَابِکَ یَا سَیَّدِی یَا حَبِیبَ اللہ

** نعتِ ابجد **

یہ نعتِ مبارکہ جنوری میں پوسٹ کرنے کا ارادہ تھا لیکن شدید بخار اور صحت کے کچھ دیگر مسائل کی وجہ سے سرکارِ دوعالم صلی الله تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کی بارگاہ میں پیش کر کے التجا کرتا ہوں کہ اللہ تعالیٰ اس سعی کے طفیل مجھے اور امتِ محمدیہ کو آسانیاں عطا فرمائے آمین یا رب العالمین بجاہِ سید الانبیاء والمرسین ۔ ** آ **

خواہشِ دید! کبھی حیطۂ ادراک میں آ خواب کو خلد بنا ،دیدۂ نمناک میں آ

** ا **

میرے سینے میں دھڑکتی ہے مدینے کی دعا زیست باقی ترے قدمین میں جینے کی دعا

** ب **

تیرے دربار میں لایا ہوں فقط حرفِ طلب تیرے شایان نہیں گرچہ مرا ظرفِ طلب

** پ **

باغِ کونین کے ہر پھول کی مہکار ہیں آپ ربِ طرفین کی تخلیق کے شہکار ہیں آپ

** ت **

ذکر درہم کا زباں پر ہے نہ دینار کی بات ہے تو بس سنگِ درِ سیدِ ابرار کی بات

** ٹ **

حجرۂ دل میں ہوئی ان کے قدم کی آہٹ ہر طرف ہونے لگی ابرِکرم کی آہٹ

** ث **

آپ ہیں بے کس و نادار کے تنہا وارث بے نوا اور گنہگار کے تنہا وارث

** ج **

دے ہمیں اپنی محبت کا اطاعت کا سراج تاکہ مل جائے ہمیں قبر میں راحت کا سراج

** چ **

اوجِ قرآن میں لکھی ہوئی ہر نعت بھی سچ سیرتِ صاحبِ قوسین کی ہر بات بھی سچ

** ح **

تیری چوکھٹ کو ترستا ہے نمِ قوسِ قزح گنبدِ سبز کی خاطر ہے خمِ قوسِ قزح

** خ **

ہے مدینے کی طرف میرے خیالات کا رخ مدحِ سرور کی طرف ہے مرے نغمات کا رخ

** د **

بے عدد ذاتِ محمد پہ سلام اور درود وقتِ آخر بھی زباں پر ہو یہ نام اور درود

** ڈ **

جچ نہیں سکتا کسی طور بھی عامی پہ گھمنڈ پھر بھی کرتا ہوں محمد کی غلامی پہ گھمنڈ

** ذ **

نعت لکھنے کے لئے کام جو آیا کاغذ میں نے آنکھوں سے کبھی دل سے لگایا کاغذ

** ر **

جب بھی آتا ہے تصور میں حرا کا منظر میری آنکھوں سے ٹپکتا ہے دعا کا منظر

** ڑ **

اے دلِ تیرہ شباں مہبطِ انوار سے جڑ رشکِ فردوس کے ہر کوچہ و بازار سے جڑ

** ز **

مرکزِ دل میں دھڑکتا ہے سدا گنبدِ سبز بامِ نزہت پہ چمکتا ہے سدا گنبدِ سبز

** س **

حشر کے روز عطا سایۂ دیوار ہو بس ہاں مری جائے پنہ آپ کا دربار ہو بس

** ش **

دل میں یوں بس گئی ہے گنبدِ اخضر کی کشش اب نظر آتی نہیں ہے کسی منظر کی کشش

** ص**

ہر نبی خاص ہے محبوبِ خداخاص الخاص ساری مخلوق میں رتبہ ہے جدا خاص الخاص

** ض **

رشکِ خورشید و جہاں تاب ہیں ان کے عارض رنگ اور نور کے اسباب ہیں ان کے عارض

** ط **

حشر میں شافعِ محشر کا ملے سات فقط یاد رہ جائے سنانے کو کوئی نعت فقط

** ظ **

ہیں مرے نامۂ اعمال میں توصیف کے لفظ صاحبِ کوثر و تسنیم کی تعریف کے لفظ

** ع **

میرے آقا مرے داتا مرے سرور ہیں رفیع میرے مولا مرے صاحب مرے پرور ہیں رفیع

** غ **

تیرگی چاہتی ہے نکہت و نزہت کے چراغ یعنی سرکارِ دو عالم کی محبت کے چراغ

** ف **

دل جھکا رہتا ہے ہر وقت مدینے کی طرف پھونک دو اسمِ محمد مرے سینے کی طرف

** ق **

عنبر و عود کی خوشبو سے معطر ہیں ورق مدحتِ نورِ مجسم سے منور ہیں ورق

** ک **

دیکھ کر سرورِ کونین کے تلوے کی چمک ہے خجل ماہِ جہاں تاب کے جلوے کی چمک

** گ **

دیکھ لوں گنبدِ اخضر وہ مثالی خوش رنگ چوم لوں روضۂ سرکار کی جالی خوش رنگ

** ل **

شافعِ حشر کی چوکھٹ پہ کھڑا ہے سائل بخشش و جود و کرم مانگ رہا ہے سائل

** م **

کیجئے مجھ پہ کرم سرور و سلطانِ حرم پھر بنا لیجے مجھے زائر و مہمانِ حرم

** ن **

لائقِ شان نہیں حرفِ کہن شاہِ زمن دے کوئی حرف نیا بہرِ سخن شاہِ زمن

** و **

یا نبی ایک جھلک مجھ کو دکھانے آؤ میری سکرات کو آسان بنانے آؤ

** ہ **

خالقِ کل کا ہے شہکار نبی کا چہرہ دونوں عالم میں نہیں دوسرا ایسا چہرہ

** ی**

ہو جو مقبول ترے در پہ سلامی میری مستند ہوگی سرِ حشر غلامی میری

** ے **

جب بھی اشفاق غمِ ہجر ستانے آئے نعت کے حرف مجھے غم سے بچانے آئے

12 views

Recent Posts

See All

شہر نبی ﷺ تیری گلیوں کا

Shehre Nabi ﷺ Teri Galiyo Ka Nakhsha Hi Kuch Aisa Hai Khuld Bhi Hai Mustaq Ziyarat Jalwa Hi Kuch Aisa Hai Dil Ko Sukun De Aankh Ko Thandak Rouza Hi Kuch Aisa Hai Farshe Zami Par Arshe Bari Ho Lagta Hi

ملتا ہے تیرے در سے زمانے کو فیض عام

ملتا ہے تیرے در سے زمانے کو فیض عام دنیا کے بادشہ بھی اسی در کے ہیں غلام تیرا غلام وہ کہ جو شاہوں کو بھیک دے نسبت نے دے دیا ہے بلندی کا وہ مقام دیکھیں گے حشر میں تری وہ شان پرجمال بے شک کرم بنائے گا ا

bottom of page