top of page
Naat Academy Naat Lyrics Naat Channel-Naat-Lyrics-Islamic-Poetry-Naat-Education-Sufism.png

نعت کی خوشبو گھر گھر پھیلے

اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں - تضمین

سلامِ رضا کا ایک شعر در مدحِ سیّدالشُہَداء، سیّدنا امیر طیبہ امیر حمزہ رضی اللہ عنہ

مع قدیم و جدید تضامین


فوجِ اعدا میں گُھس کر سناں بازیاں

دُور ہی سے کبھی تیر اندازیاں

پرچمِ افتخارِ صفِ غازیاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از مولانا سید اختؔرالحامدی)


دین کے شیر کی معرکہ سازیاں

تیر کی بارشیں پھر فرس تازیاں

صفِ اعدا پہ وہ تیغ اندازیاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از محمد عثمان اوؔج اعظمی)


ابنِ اسود پہ وہ تیر اندازیاں

گاہے عتبہ پہ انکی سناں بازیاں

مرحبا مرحبا وہ سرافرازیاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از صاحبزادہ ابوالحسن واحؔد رضوی)

یہ تمنا یہ جذبہ یہ قربانیاں

اور یہ ذوقِ شہادت کی بے چینیاں

کافروں کی یہ میداں میں حیرانیاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از ڈاکٹر سید ہلاؔل جعفری)

جاں نثارانِ مولا کی جانبازیاں

اہلِ بطحا و طیبہ کی جانبازیاں

حق پسند اہلِ تقوٰی کی جانبازیاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از حافظ عبدالغفّار حافظ)


شیرِ حق دین کا ضیغمِ سخت جاں

عظمتِ شاہِ کونین کا پاسباں

دشمنانِ نبی کا مٹایا نشاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از محمد عبدالقیوم طاؔرق سلطان پوری)

وہ رضاعی اخِ شاہِ کون ومکاں

وہ شجاعت کا لاریب کوہِ گراں

وہ شہامت کا ہر رَن میں اونچا نشاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از محمد عبدالقیوم طاؔرق سلطان پوری)

سرگروہِ شہیدانِ حق بے گماں

وہ فلک مرتبت وہ سپہر آستاں

شیرِ حق اور شیرِ شہِ انس و جاں

’’اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوَت پہ لاکھوں سلام‘‘

(تضمین از محمد عبدالقیوم طاؔرق سلطان پوری)


ھیں مقدس احد کی وہ سب گھاٹیاں

جن میں عشاق نے دے کے قربانیاں

مصطفیٰ سے نبھائیں وَفاداریاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیر غران سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از قاضی عبد الدائم ھری پور)


تیغ زن جب ہوا لشکرِ غازیاں

ہوگئیں ختم باطل کی دَم سازیاں

کھل گئے سب کے سب کفر کے ژازیاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از بشیر حسین ناظم)


وہ رسول الملاحم، ظفر کا نشاں

ختم اصحاب پر ان کے، قربانیاں

عشقِ محبوبِ حق جن کو تیغ وسناں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیرِ غرانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از سید حامد یزدانی)


فخرِ طبل و علم، قائدِ غازیاں

دونوں ہاتھوں سے وہ برق اندازیاں

دیکھ کر دنگ ہـے لشکرِ تازیاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیرِ غرانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از ڈاکٹر شہزاد مجددی)


شاہِ کون و مکاں پر فدا کاریاں

ان کے اصحاب کی تیر اندازیاں

اللہ اللہ وہ جوشِ صفِ غازیاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از نواز اعظمی)


کافروں سے وہ حمزہ کی جانبازیاں

کوئی دیکھے وہ حمزہ کی جانبازیاں

ہاں نہتے وہ حمزہ کی جانبازیاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غُرّانِ سَطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از نواز اعظمی)


جن کی جرات پہ ششدر ہوا آسماں

جن کی ہیبت سے لرزے زمین و زماں

جو وقارِ رسالت کے ہیں پاسباں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین سید اعجاز شاہ عاجز)


اللہ اللہ وہ شمشیر اندازیاں

جرأتِ تام کی وہ بِنا سازیاں

ذہن سے محو کر نقشِ سود و زیاں

ان کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غرانِ سطوت پہ لاکھوں سلام

(تضمین فاضل میسوری)


جوشِ ایماں کی تھیں کچھ عجب مستیاں

بر سرِ کفر دہشت کی تھیں بدلیاں

حوصلہ، عزم و ہمّت، فدا کاریاں

"اُن کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از قاری محمد فرقان بزمی، پیلی بھیت)


ضیغمِ رب تعالٰی کی جاں بازیاں

عمّ سرکارِ بطحا کی جاں بازیاں

خسروِ خیلِ شہدا کی جاں بازیاں

"اُن کے آگے وہ حمزہ کی جاں بازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از قاری محمد فرقان بزمی، پیلی بھیت)


ان کے اصحاب ہیں رہنمائے جہاں

خاکِ پا جن کی ہـے زینتِ کہکشاں

ہر صحابی کی بـے مثل ہـے داستاں

"اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از ابو المیزاب اویس آبؔ رضوی)


دین پر جب کبھی آئیں دُشواریاں

شورِ تکبیر سے گونج اُٹھیں وادیاں

دیدنی تھیں صحابہ کی تیاریاں

"اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از ابو المیزاب اویس آبؔ رضوی)


جب چلا بہرِ رزمِ اُحد کارواں

ولولہ دیکھ کر دنگ تھا آسماں

جاں لٹانے کو تیار پِیر و جواں

"اُن کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیرِ غرّانِ سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از ابو المیزاب اویس آبؔ رضوی)


سب نے لکھی ہیں حمزہ پہ تضمیں یہاں

شاعروں کا قلم ہے کہ سیل رواں

دیدنی ہے اب ان کی قلم کاریاں

جوش الفت میں تاباں ہیں خورد کلاں

شعر احمد رضا کی ہے خوبی بیاں

سب نے ختم سخن کردیا ہے یہاں

"ان کے آگے وہ حمزہ کی جانبازیاں

شیر غران سطوت پہ لاکھوں سلام"

(تضمین از حضرت سید وجاہت رسول تاباں قادری)



96 views

Recent Posts

See All

سلام اس پر نبوت نے جسے صدیق فرمایا

سلام اس پر نبوت نے جسے صدیق فرمایا شرف جس نے یہاں معراج کی تصدیق کا پایا سلام اس پر کہ جس نے سبقتِ ایماں بھی پائی ہے اس عزت کے لیے تقدیر جس کو چن کے لائی ہے سلام اس پر جو اک تاریخ ہے حسنِ عزیمت کی س

bottom of page