Hazrat Umar

img_1522
Like
Like Love Haha Wow Sad Angry
4

اَدبی موتیوں میں پِرویا ہوا عُمری خاکہ !!

ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

عُمر بن الخطّاب رضی اللہ عنہ ….. رنگ ایسا کہ سفید و سُرخ گُلاب، آنکھیں بڑی اُن میں ڈورِ عُناب۔ سر کے بال کم بہت کمیاب۔ ناک سیدھا، گال بھرے بھرے، قد لمبا، طوالت کے لیے عزت مآب۔ ہاتھ پاؤں بڑے بڑے مگر ناموزونیت سے اجتناب۔ ہر دَم سنجیدہ، لہجہ کھرا، طبیعت میں غُصّہ، چال تیز بس آہوئے بے تاب۔ چہرے پر چاندنی مثالِ ماہتاب۔ دُعائے نبی کا جواب، جوابِ لاجواب۔ آفتاب آمد دلیلِ آفتاب۔

جن کا قبولِ اسلام کُفر پر بجلیوں کا عتاب۔ اُس کو خُدا کی لگن، اُسی دُھن میں وہ مگن، اِسی کی آرزو میں وہ ماہئ بے آب۔ اُس کے سامنے کوئی رُستم نہ کوئی سہراب۔ کرگسانِ باطل کے لیے وہ ایک عقاب۔ خطیبِ مایہ ناز، حق میں اُس کے الفاظ باریاب۔ اُس پر گواہ خُدا کی آخری کتاب۔

صدیق کا جانشین، وہ امیر المؤمنین، بیت المال کا امیں، اُس کے پاس ہر وقت پائی پائی کا حساب۔ آپ اپنا محتسب، اُس کی عمّال پر نظر، اپنے اعمال پر نظر، ہر لحظہ زیرِ احتساب۔ اُس کی سپاہ بے پناہ، چھا گئی مثالِ آب۔ اُس کی سلطنت بے پایاں، بے حساب۔ اُس نے ختم کردیا قیصر و کسریٰ کا رعب داب۔ اُس کے گدا کیقباد و افراسیاب۔ اُس کا عہد عہدِ اسلام کا شباب۔ اُس کی حکومت استحکامِ انقلاب۔

پیوند لگے کپڑے عزیز، مُسترد اطلس و کمخواب۔ اُس کی غذا سوکھی روٹی پیالہ اور پیالۂ آب۔ عُسرتوں میں وہ شاداب۔ اُس کی نگاہ میں ہیچ عشرتوں کے سُراب۔ اُس کی اِک نگاہ سے دل کی کھیتیاں سیراب۔ اُس کا ذکر کارِ ثواب۔ اُس کی راہ راہِ صواب۔ اُس کی سیرت اہلِ حق کا نصاب۔

جن کاشرف بس شرفِ انتخاب ۔ اُس کی عظمتیں کہاں ہر کسی کو دستیاب۔ اُس کے نام سے پہلے نامِ صدیق ہی کا باب۔ اُس کا مُشیر شیرِ خُدا بُوتُراب۔ اُس کی عزت عزتِ رسالتِ مآب ﷺ۔ وہ نبی کا رفیق، اُنہی کے پاس محو خواب۔ کافی ہے اُس کے لیے یہ قولِ آنجناب ﷺ

” میرے بعد کوئی نبی ہوتا تو عُمر ہوتے ۔”

3 I like it
2 I don't like it